اشفاق ظفر کا نتائج تسلیم کر نے سے انکار،الیکشن کمیشن کو ووٹوں کی دوبارہ گنتی کیلئے درخواست

چناری(خصوصی رپورٹر)پاکستان پیپلز پارٹی آزاد کشمیر کے مرکزی نائب صدر،امیدوار ایل اے32حلقہ چھ جہلم ویلی صاحبزادہ محمد اشفاق ظفر ایڈووکیٹ نے الیکشن نتائج تسلیم کرنے سے انکار کر تے ہوئے تھیلے کھول کر ووٹوں کی دوبارہ گنتی کے لیے الیکشن کمشن آزاد کشمیر کو درخواست دے دی ۔اشفاق ظفر نے صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ مجھے ایک سازش کے تحت ہرایا گیا میرے اکثر پولنگ ایجنٹوں کو رزلٹ ہی نہیں دیے گئے اسی لیے سرکاری ملازمین کے ووٹوں کی گنتی کے عمل کا بائیکاٹ کیا اور میرے مقابلہ میں پاکستان مخالف بیانیہ کی حمایت کرنے والے راجہ فاروق حیدر کو ملی بھگت سے کامیاب کروایا گیا کسی صورت خاموش نہیں رہوں گا ووٹوں کی دوبارہ گنتی کے لیے درخواست جمع کروا دی ہے اگر تھیلے کھول کر دوبارہ گنتی نہ کی گئی تو جہلم ویلی جام کردوں گا میں اور میرے کارکن جیتی ہوئی جنگ سازش کے تحت شکست میں تبدیل کرنے والوں کو کسی صورت نہیں چھوڑیں گے انھوں نے کہا کہ جب راجہ فاروق حیدر حلقہ سات سے واضع شکست سے ہار رہے تھے تو انھوں نے ایک بار پھر بلیک میلنگ کے لیے اسلام آباد کی طرف مارچ کی دھمکی دی جس کے بعد سازش کے زریعے مجھے ہرا کر فاروق حیدر کو کامیاب کروایا گیا میں عوام کے حقوق کے لیے سیاست کر رہا ہوں نتائج تبدیل کرنے والوں کو کسی صورت نہیں چھوڑ سکتا انھیں سڑکوں پر گھیسٹوں گا کارکن تیار رہیں میں رزلٹ تبدیل کرنے والوں کے خلاف آخری حد تک جائوں گا آئینی ،قانونی جنگ کے ساتھ ساتھ بھر پور احتجاج اور احتجاج میں ہر حربہ استمال کیا جائے گا بہت بڑی سازش میرے اور حلقہ چھ کے عوام کے خلاف کی گئی ہے تمام رزلٹ پہنچنے کے آٹھ گھنٹے بعد آر او نے رزلٹ کا اعلان کیا جس سے سازش واضع نظرآرہی ہے اب سب رازوں سے پردہ اٹھاؤں گا کارکن تیار رہیں اینٹ کا جواب پتھر سے دیا جائے گا حلقہ چھ جہلم ویلی کے عوام نے میرے حق میں فیصلہ دیا مقتدر حلقوں کو اس بات کا فوری نوٹس لینا چاہیے کیسے پاکستان مخالف بیانیہ کی حمایت کرنے والے مسلم لیگ ن آزاد کشمیر کے صدر راجہ محمد فاروق حیدر خان کامیاب ہو گئے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں