افغان سفیر کی بیٹی کے اغوا کی تفتیش افغانستان اور پوری دنیا کے سامنے رکھیں گے ،شاہ محمود قریشی

اسلام آباد(صباح نیوز) وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے کہا ہے کہ حکومت پاکستان افغان سفیر کی بیٹی کے واقعہ میں ملوث ملزمان کی جلد گرفتاری کیلئے ہر ممکن اقدام اٹھارہی ہے۔ معاملے کے حوالے سے کوئی چیز پوشیدہ نہیں رکھی جائے گی اور انصاف کے تمام تقاضے پورے کیے جائیں گے۔ افغان سفیر کی بیٹی کے اغوا کی تفتیش افغانستان اور پوری دنیا کے سامنے رکھیں گے اور مجرمان کو بے نقاب کریں گے، اسلام آباد میں مشیر قومی سلامتی معید یوسف اور آئی جی اسلام آباد کے ہمراہ پریس کانفرنس کرتے ہوئے وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے کہا ہے کہ اسلام آباد میں افسوس ناک واقعہ رونما ہوا، جس سے ہم سب کو تکلیف تھی اور ہونی چاہیے، ہم بھی بیٹیوں والے ہیں اور ان کی عزت، احترام اور پرائیویسی سب پر لازم ہے۔انہوں نے کہا کہ میرے علم میں جب آیا کہ افغانستان کی حکومت نے اپنے سفیرو اور سینئر سفارت کاروں کو واپس بلا رہے ہیں تو میں نے افغان وزیر خارجہ سے رابطہ کرکے حقائق سے مطلع کرنے کا فیصلہ کیا اور آج صبح ان کو صورت حال سے آگاہ کیا۔ افغان ہم منصب کو 16جولائی 2021ء کو ہونے والے واقعہ پر اب تک اٹھائے گئے اقدامات سے آگاہ کیا۔ افغان ہم منصب کو یقین دلایا کہ حکومت پاکستان ملزمان کی جلد گرفتاری کیلئے ہرممکن اقدام اٹھائے گی۔ وزیراعظم عمران خان ذاتی طورپر معاملے کو دیکھ رہے ہیں ۔وزیر خارجہ نے کہاکہ افغان سفارت خانے اورقونصلیٹ کی سیکورٹی میں مزید اضافہ کردیا گیا ہے۔ پاکستان اور افغانستان کی قدریں مشترکہ ہیں۔ ایک دوسرے کا احترام کرتے ہیں۔ معاملے کے حوالے سے ہم نے کوئی بھی چیز پوشیدہ نہیں رکھی۔ واقعہ کے حوالے سے انصاف کے تقاضے پورے کیے جائیں گے۔ افغانستان کی طرف سے بھیجی جانے والی تحقیقاتی ٹیم کے ساتھ مکمل تعاون کیا جائے گا۔ دونوں ملکوں کے تعلقات کی اہمیت سے ہم غافل نہیں ہیں ہمیں سفارتی اداب و ذمہ داریوں کا احساس ہے ہم افغانستان کے ساتھ روابط کو برقرار رکھنا چاہتے ہیں خاص طورپر ان حالات میں جب امن عمل جاری ہے۔ وزیر خارجہ نے کہاکہ افغانستان اپنے سفیر اور سفارت کاروں کو واپس بلانے پر نظر ثانی کرے ۔ دوحہ میں افغان امن عمل کیلئے مذاکرات جاری ہیں۔ افغان وزیر خارجہ نے تحقیقات آگے بڑھانے کیلئے تعاون کایقین دلایا ہے۔ افغان وزیر خارجہ نے وزیراعظم عمران خان کا شکریہ ادا کیا۔ میڈیا کے سوالوں کا جواب دیتے ہوئے وزیر خارجہ نے کہاکہ ہم حقائق دنیا کے سامنے لانا چاہتے ہیں۔ ہر حال میں انصاف کے تقاضے پورے کیے جائیں گے۔ سیکرٹری خارجہ نے بھی افغان سفیر اور ان کی بیٹی کو تعاون کا یقین دلایا۔ افغان سفارت خانے کی سیکورٹی کو مزید بڑھا دیا گیا ہے۔ افغان سفیر اور عملے کی واپسی افسوسناک ہے امید ہے افغانستان اپنے سفیر اور سفارت کاروں کی واپسی پر نظرثانی کرے گا۔ جبکہ مشیر قومی سلامتی معید یوسف نے کہاکہ پاکستان کو ہائبرڈ وار کا سامنا ہے ملک دشمن قوتیں تاثر دینا چا ہتی ہیں کہ پاکستان میں سیکوٹری صورتحال ٹھیک نہیں۔ سوشل میڈیا پر جعلی تصویروں سے بے بنیاد افواہیں پھیلا دی جاتی ہیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں