پیپلز پارٹی کا انتخابی منشور پیش

مظفرآباد(وقائع نگار خصوصی)پاکستان پیپلزپارٹی آزادکشمیر نے اپنا انتخابی منشور پیش کردیا ،مادری زبان کو سلیبس کا حصہ بنائیں گے ،بلدیاتی انتخابات کروائیں گے اورطلبہ یونین کو بحال کریں گے، بااختیار اور خوشحال ریاست جموںکشمیر ہماری منزل اور کشمیر کی آزادی ہمارا نصب العین کے تحت پیش کیے گے منشور میں غیر طبقاتی سماج کا قیام ،آئین قانون کی بالا دستی ،غربت جہالت ،انتہاپسندی اور دہشتگردی کیخلاف جدوجہد کا عزم انصاف،تعلیم ،صحت روزگار اور معیاری ضروریات زندگی تک رسائی اہم نکات ہیں ،گزشتہ روز مرکزی ایوان صحافت میں پاکستان پیپلزپارٹی کے صدر چوہدری لطیف اکبر نے پارٹی منشور پیش کرتے ہوئے کیا ،اس موقع سٹی صدر پی پی راجہ بشارت ،مرکزی رہنما پی پی چوہدری جمیل ودیگر بھی موجود تھے۔انہوں نے کہا کہ کشمیر کی آزادی ہمارا نصب العین ہے ،گلگت بلتستان ریاست جموںکشمیر کا جزو لانیفک ہے ،اقوام متحدہ کی قراردادوں کے مطابق مسئلہ کشمیر کا حل ناگزیر ہے تحریک آزادی کیلئے دی گئی قربانیوں کور ائیگاں نہیں جانے دیا جائے گا،کشمیر کا وہی حل قبول ہوگا جو کشمیری عوام کی مرضی کے مطابق ہوگا ،منشور میں پیش کیے گئے دیگر نکات میں شعبہ تعلیم ،صحت ،لوکل گورنمنٹ وبائی امراضی کی روک تھام ،جنگلات اور جنگلی حیات کی حفاظت ،خوراک ،زراعت ،برقیات ہائیڈروپاور ،سیاحت ،اطلاعات ونشریات قانون انصاف وانسانی حقوق ،اسپورٹس وامور نوجوانان ،ثقافت روزگار کی ضمانت ،امور خواتین وسماجی بہود ،ماحولیات ٹیکنالوجی ،پولیس اصلاحات ،جیل خانہ جات ،اوقاف وامور دینہ محنت اور افرادی قوت ،صنعت وتجارت ،رسل ورسائل بحالیات ،ریاستی انفراسڑیکچر اور بینک آف جموںکو شیڈول بینک بنانا شامل ہیں شعبہ تعلیم کے بارے میں گفتگو کرتے ہوئے لطیف اکبر نے کہا کہ پاکستان پیپلزپارٹی آزادکشمیر بجٹ کے جی ڈی پی کا ایک بڑا حصہ تعلیم کے فروغ اور اس کے معیار کی بہتری کیلئے مختص کریگی ،آزادکشمیر کے تینوں ڈویژن میں الگ الگ تعلیمی بورڈ کا قیام عمل میں لایا جائے گا۔ریاست جموںوکشمیر میں یکساں ،معیاری اور مفت تعلیم کی فراہمی کو یقینی بنانے کیلئے قانون ساز اسمبلی سے رائٹس آف ایجوکیشن کا بل پاس کروایا جائے گا۔فنی تعلیم کو آٹھویں جماعت سے نصاب کا حصہ بنایا جائے گا تاکہ بے روزگاری کا مسئلہ پر قابو پایا جاسکے ،جدید خطوط پر استوار یکساں نصاب تعلیم کے نفاذ کو یقینی بنایا جائے گا۔انہوں نے کہا کہ شعبہ تعلیم بھی دیگر شعبوں کی طرح فوری توجہ کا متقاضی ہے ڈویژنل ہیڈ کوارٹر کی سطح پر دل ،گردہ ،کینسر اور جگر کی بیماریوں کے علاج کے لیے جدید سہولیات فراہم کی جائیں گی ۔شعبہ صحت کے لیے وسائل میں خاطر خواہ اضافہ کے ساتھ ساتھ اس سے وابستہ ملازمین کی تربیت ،ترقی اور نئی بھرتیوں کے لیے خصوصی اقدامات کیے جائیں گے ۔ہسپتالوں میں ضروری آلات اور ادویات کی فراہمی اور عملے کی کمی کو پورا کرنے کے لیے ہنگامی اقدامات کیے جائیں گے ۔پرائیویٹ ہسپتالوں کے قیام کے لیے خصوصی قانونس ازی کی جائے گی جس میں ہسپتال کے معیار اور ضروری طبی سہولیات کو مدنظر رکھتے ہوئے لائسنس جاری کیے جائیں گے ۔وبائی امراض کی روک تھام کیلئے بھی اقدامات اٹھائیں جائیں گے انہوں نے کہا کہ کورونا وائرس سے متاثرہ افراد کی بے نظیر انکم سپورٹ پروگرام سے امداد کی جائے گی ،کورونا وائرس یا کسی بھی دیگر وبائی مرض کے میڈیکل ٹیسٹ کے لیے مفت سہولیات فراہم کی جائیں گی ،ہر ضلع اور ڈسڑکٹ ہیڈ کوارٹر میں ایک کورونا یونٹ قائم کیا جائے گا۔انہوں نے کہا کہ شعبہ لوکل گورنمنٹ کے ذریعے ایک کثیر فنڈ مفاد عامہ کے منصوبوں کے لئے دیا جاتا ہے ،پاکستان پیپلزپارٹی بلدیاتی انتخابات کے انعقاد کو فی الفور یقینی بنائے گی نوجوانوں کو موثر نمائندگی دینے کے لیے 20فیصد کوٹہ مختص کیا جائے گا،شفافیت کو قائم رکھنے کیلئے لوکل گورنمنٹ کے تمام منصوبہ جات کو آن لائن کردیا جائے گا،منتخب بلدیاتی نمائندوں کے ذریعے ترقیاتی منصوبوں کی موثر مانیٹرنگ کا نظام لا گو کیا جائے گا۔انہوں نے کہا کہ شعبہ جنگلات اس وقت آزادجموں وکشمیر کا ایک بڑ احصہ جنگلات پر مشتمل ہے مگر وقت گزرنے کے ساتھ اس میں تیزی سے کمی واقع ہوتی جارہی ہے ،تعلیمی اداروں میںہفتہ میں ایک دن جنگلات کے بارے میں خصوصی آگاہی فراہم کی جائے گی ،طلباء کو شجر کاری مہم خصوصی حصہ بنایا جائے گا،ضرورت مند افراد کو ایندھن کے متبادل ذرائع فراہم کیے جائیں گے تاکہ جنگلات کے رقبہ میں اضافہ کیا جاسکے ،جنگلی حیات کے تحفظ کے لیے اقدامات اٹھائے جائیں گے

اپنا تبصرہ بھیجیں