کورونا وائرس کے کیسز میں چوبیس گھنٹے کے دوران اضافہ ہوا

اسلام آباد (سٹاف رپورٹر )کورونا وائرس کے کیسز میں چوبیس گھنٹے کے دوران اضافہ ہوا 47472 ٹیسٹ کیے گئے جس سے 1980 کیس سامنے اہے اس طرح آزاد کشمیر میں 864 ٹیسٹ کیے گئے 136 کیس سامنے آئے، کورونا وائرس کی روک تھام کے حوالے سے اقدامات کا سلسلہ جاری, حکومت آزاد کشمیر نے تمام سیاحتی مقامات کو 19 جولائی سے 29 جولائی تک بند کرنے کا فیصلہ کیا ہے ، نوٹیفکیشن میں لکھا ہے کہ جن ریسٹ ہاؤس اور ہوٹلز کی بکنگ ایڈوانس کی گئی وہ کینسل کی جاہے اور مزید بیکنگ نہ کی جاہے دس روز کے لیے سیاحوں پر مکمل پابندی لگا دی ، وفاقی حکومت اسلام آباد میں بھی کرونا وائرس کے کیسوں میں اضافہ ہوا ہے اسطرع ،حکومت سندھ نے کورونا کے بڑھتے ہوئے کیسز کے باعث ایک بار پھر سکولز، پارکس اور ہوٹل اور جمہ سے سکول بند کرنے کا فیصلہ کرلیا ہے۔ تفصیلات کے مطابق وزیراعلیٰ سندھ مراد علی شاہ کی
زیر صدارت صوبائی کووڈ ٹاسک فورس کا اجلاس ہوا جس میں کورونا کے بڑھتے ہوئے کیسز کی صورتحال کا جائزہ لیا گیا۔نجی ٹی وی ٹوئنٹی فور نیوز کے مطابق سیکرٹری صحت کی جانب سے اجلاس کو بریفنگ دی گئی جس میں بتایا گیا کہ صوبے میں نئے کیسز کی شرح 7.4 فیصد ہو گئی ہے، 5 فیصد سے کووڈ کیسز بڑھے تو یہ خطرناک صورتحال ہے۔ گزشتہ روز 16262 ٹیسٹ کئے گئے جس میں 1201 کیسز سامنے آئے، اس وقت 837 مریض ہسپتالوں میں ہیں جس میں سے زیادہ تر مریض سرکاری ہسپتالوں میں زیر علاج ہیں۔ سیکرٹری صحت کاظم جتوئی نے اجلاس میں مزید بتایا کہ کل 13 جولائی کو کراچی میں نئے کیسز کی شرح 17.11 فیصد تھی، ہفتہ وار رپورٹ کے مطابق کراچی شرقی میں کیسز کی شرح21 فیصد، کراچی جنوبی میں 15 فیصد، کراچی وسطی میں 12 فیصد اور کورنگی میں 8 فیصد کیسز ہیں۔اجلاس میں صوبے میں کورونا کے بڑھتے ہوئے کیسز پر تشویش کا اظہار کیا گیا اور وبا کی روک تھام کے لئے نئی پابندیاں لگانے کا فیصلہ کیا گیا۔انڈور ڈائننگ کو کل رات سے بند کرنے کا فیصلہ کیا گیا اور ساتھ ہی سندھ بھر کے سکولوں میں پہلی سے آٹھویں جماعت تک کلاسز کو جمعہ سے بند کرنے کا فیصلہ کیا گیا جبکہ نویں دسویں جماعت اور اس سے اوپر کی کلاسز میں بھی صرف امتحانات کی اجازت ہو گی۔صورتحال کو کنٹرول کرنے کے لئے مزید سخت پابندیاں بھی لگائی جا سکتی ہیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں